موسلادھار بارشوں کی پیشگوئی، متعلقہ محکموں اور ضلعی میونسپل انتظامیہ کو عملے اور مشینری کو تیار حالت میں رکھنے کی ہدایت

0
1177

کراچی (اسٹاف رپورٹر) میئر کراچی وسیم اختر نے کراچی میں جمعرات تا ہفتہ تیز اور موسلادھار بارشوں کی پیشگوئی پر بلدیہ عظمیٰ کراچی کے متعلقہ محکموں اور ضلعی میونسپل انتظامیہ کو عملے اور مشینری کو تیار حالت میں رکھنے کی ہدایت کی ہے جبکہ متوقع بارشوں کے پیش نظر کے ایم سی کے اسپتالوں کو بھی الرٹ کردیا گیا ہے اور فائر بریگیڈ، ریسکیو، پارکس ڈپارٹمنٹ اور محکمہ انجینئرنگ سمیت تمام متعلقہ محکموں میں افسران اور دیگر متعلقہ عملے کو ڈیوٹی پر رہنے کی ہدایت کی گئی ہے تاکہ کسی بھی ہنگامی صورتحال میں شہریوں کو فوری مدد فراہم کی جاسکے۔ منگل کے روز شہر کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے منعقد ہونے والے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میئر کراچی نے کہا کہ محکمہ موسمیات نے شہر میں پہلے سے زیادہ بارشوں کی پیشگوئی کی ہے جس سے اربن فلڈنگ کا خطرہ ہے لہٰذا اس سے نمٹنے کی پیشگی تیاری رکھی جائے تاکہ شہر کے کسی بھی علاقے میں رہنے والوں کو برسات کے دوران پریشانی سے بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ بارش ہونے کی صورت میں پانی کی نکاسی کا عمل فوری شروع کیا جائے، انڈرپاسز اور چوکنگ پوائنٹس پر مشینری اور ڈی واٹرنگ پمپس قبل از وقت پہنچا دیئے جائیں، رین ایمرجنسی سینٹر 24 گھنٹے فعال رکھے جائیں، شہری کسی بھی ہنگامی صورتحال اپنی شکایات ضلعی سطح پر قائم کئے گئے ایمرجنسی سینٹر یا سٹیزن کمپلین انفارمیشن سینٹر 1339 پر درج کراسکتے ہیں، جہاں متعین عملے کو تمام شکایات فوری متعلقہ محکمے کو بھیجنے کی ہدایت کی گئی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ ماضی کے تجربات کو دیکھتے ہوئے کے بی سی اے سمیت دیگر متعلقہ ادارے بھی کسی بھی ناخوش گوار واقعہ سے نمٹنے کے لئے مخدوش عمارتوں پر کڑی نظر رکھیں اور مخدوش عمارتوں میں رہائش پذیر شہری متوقع شدید بارشوں کے پیش نظر احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ میئر کراچی نے کہا کہ کراچی میں برساتی نالوں کی صفائی کے کام میں مزید تیزی لانی ہوگی کیونکہ کراچی اب مزید اربن فلڈنگ جیسی صورتحال کا متحمل نہیں ہوسکتا خاص طور پر برساتی نالوں کے اطراف اور نشیبی علاقوں کے نالوں کے اوور فلو سے متاثر ہونے کا خدشہ موجود ہے اس لئے تمام متعلقہ شہری ادارے جامع اور مربوط حکمت عملی کے تحت کام کریں تو اس کے بہتر نتائج آئیں گے، میئر کراچی وسیم اختر نے کہا کہ میں کئی سال سے صوبائی اور وفاقی حکومت کی توجہ اس طرف مبذول کرا رہا ہوں کہ کراچی کی بستیوں کو اربن فلڈنگ کے خطرے کا سامنا ہے لہٰذا برساتی نالوں کو جو نکاسی آب کا قدرتی ذریعہ ہیں، صفائی کو جلد سے جلد مکمل کیا جائے، انہوں نے کہا کہ میں ایک بار پھر صوبائی حکومت سے درخواست کروں گا کہ وہ اپنی ذمہ داری کو پورا کرے اور شہر میں صفائی ستھرائی کے لئے ٹھوس اور فوری اقدامات کرے تاکہ آئندہ مون سون کے موسم میں کراچی کے شہری بھی دیگر بڑے شہروں کے باسیوں کی طرح برسات کے موسم سے خوفزدہ یا پریشان ہونے کے بجائے اس سے محظوظ ہوسکیں اور انہیں اپنی روزمرہ زندگی میں درپیش بنیادی مسائل سے نجات مل سکے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here