محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی کے پہلے ڈیجیٹل میڈیا اسٹوڈیو کا افتتاح

0
1303

محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی کے پہلے ڈیجیٹل میڈیا اسٹوڈیو کا افتتاح
کرا چی:( اسٹاف رپورٹر) محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی ( ماجو ) کے صدر پروفیسر ڈاکٹر زبیر شیخ نے کہا ہے کہ تعلیم کے شعبے میں اب بہت تیزی کے ساتھ تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں. آج کے دور میں ڈیجیٹل میڈیا کے توسط سے تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھنے پر انحصار بڑھتا جارہا ہے , خاص طور پر کوویڈ 19 وبائ بیماری کے عالمی بحران کی بنا پر تعلیمی اداروں کی بندش کے نتیجے میں آن لائن تعلیم کی بنا پر اکیڈمیک کلینڈر وقت پر مکمل کرنا بہت آسان ہوگیا ہے اور طلباء آپ بازار جاکر درسی کتابیں خریدنے کے بجائے ڈیجیٹل لائبریریوں سے اپنی ضروریات پوری کر رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ شام یونیورسٹی کیمپس میں ماجوکے پہلے ڈیجیٹل میڈیا اسٹوڈیو کا افتتاح کرتے ہوئے کیا جو کہ نجی شعبہ کی یونیورسٹیوں میں قائم کیا جانے والا اپنی نوعیت کا پہلا ریکارڈنگ اسٹوڈیو ہے۔ ماجو کے اسٹوڈیو میں ریکارڈنگ اور ایڈیٹنگ کی سہولیات کے ساتھ ساتھ گرین کروم، لائٹ اور وائٹ بورڈ لیکچرز ریکارڈنگ بھی کی جا سکے گی۔ افتتاحی تقریب کے موقع پر شعبہ جاتی سربراہان اور سینئر فیکلٹی ممبران بھی شریک تھے۔ڈاکٹر زبیر شیخ نے اس موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ماجوکے اپنے ایف ایم ریڈیو اسٹیشن کے قیام کے بعد اب ڈیجیٹل میڈیا اسٹوڈیو کے قیام کو خوش آئند قرار دیا اور اس توقع کا اظہار کیا کہ اب ہمارے اساتذہ اور دیگر ماہرین اپنے لائیو لیکچرز کے ذریعے آن لائن ایجوکیشن کی ضروریات کو باآسانی پورا کرسکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اسٹوڈیو کے قیام سے لائیو لیکچرز کے ذریعے کلاسسز اور ٹاک شوز کا اہتمام بھی کیا جا سکے گا اور تعلیم کے شعبہ میں ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے شعبہ میں ٹیکنالوجی کے بڑھتے ہوئے استعمال کی بنا پر اب اساتذہ اور طلبہ کی کے درمیان موٹر کمیونیکیشن بہت آسان ہو گئی ہے اور طلبہ گھر بیٹھے اپنی تعلیم بہتر طور پر جاری رکھ سکتے ہیں۔ انہوں نے اساتذہ پر زور دیا کہ اب ہمیں اپنی سوچ کا دائرہ وسیع کرنا ہوگا اور تعلیم کے شعبے میں ہونے والی تبدیلیوں سے پورا فائدہ اٹھانے پر توجہ دینا ہو گی ورنہ ہم بہت پیچھے رہ جائیں گے۔ اس موقع پر ڈیجیٹل میڈیا اسٹوڈیو کے نگراں اور فیکلٹی ممبر علی ناصر نے بتایا کہ اس اسٹوڈیو میں ہم لائیو لیکچرز اور ٹاک شوز کے علاوہ تعلیمی شعبے کی خبروں کا سلسلہ بھی شروع کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو درپیش سماجی معاشی اقتصادی اور تعلیمی مسائل پر بات چیت کے لئے ممتاز تعلیمی سیاسی سماجی بزنس ماہرین کو بھی مدعو کریں گے تاکہ ہمارے طلبہ کو ملک کے درپیش مسائل سے آگاہی ہوسکے اور ان کے حل کے حل کے لیے بات کرسکیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here