ہاکی کے کسی ایک کھلاڑی کا بھی مسئلہ حل حل کروانے کے لئے کسی کے پاس جانا پڑا تو جاونگی، سیدہ شہلا رضا

0
168

ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کا گروپ۔ فوٹو میں ڈائریکٹر مارکیٹنگ ساؤتھ عمران سلیم، اولمپیئنز اصلاح الدین، حنیف خان، ایاز محمود اور حیدر حسین سمیت دیگر موجود ہیں

ہاکی کے کسی ایک کھلاڑی کا بھی مسئلہ حل حل کروانے کے لئے کسی کے پاس جانا پڑا تو جاونگی، سیدہ شہلا رضا
ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کو دستیاب سہولت فراہم کرنا ہماری زمہ داری ہے، عمران سلیم
حیدر حسین کی کاوشوں کے باعث آج وومن ٹیم کی تشکیل کا عمل مکمل ہوا، اولمپیئن اصلاح الدین
ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کی تشکیل نئے دور کا آغاز ہے۔ اولمپئنز
کراچی:( اسپورٹس رپورٹر) کراچی ہاکی ایسوسی ایشن اور ٹاپ سٹی ون کے درمیان گزشتہ سال طے پانے والے یاداشت پر عمل درآمد شروع ہوگیا، کے ایچ اے اسپورٹس کمپلیکس میں منعقدہ ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم ممبران میں یاداشت کے مطابق پہلے چیک کی تقریب تقسیم کا انعقاد کیا گیا، تقریب کی صدارت جنرل منیجر پی ایچ ایف وومن ونگ سندھ، کے ایچ اے کی چیئرپرسن و صوبائی وزیر ترقی نسواں سیدہ شہلا رضا نے کی، اس موقع پر پی ایچ ایف کے کوآرڈینیٹر و سیکریٹری کے ایچ اے سابق انٹرنیشنل ہاکی پیلئر حیدر حسین، اولمپیئنز اختر السلام، سمیع اللہ، اصلاح الدین، حنیف خان، ناصر علی، ایاز محمود، وسیم فیروز، عبدالحسیم خان، مارکیٹنگ ہیڈ ٹاپ سٹی ون کے عباس حیدر، مارکیٹنگ ہیڈ ساؤتھ زون عمران سلیم، سابق انٹرنیشنل ہاکی پلیئرز ابوذر امراؤ، پرویز اقبال، خالد جونیئر، لئیق لاشاری تسلیم عثمانی، عاصم خان، علی اذلان خان، شاہین فاطمہ،ناصرہ الیاس، شاہین سلطان، آرم بخاری، کے ایچ اے کے چیئرمین گلفراز احمد خان، سینئر نائب صدر ڈاکٹر ایس ماجد، ایگزیکٹو بورڈ کے ارکان جاوید اقبال، امتیاز الحسن، پروفیسر راؤ جاوید اقبال، فیصل اسمعیل، وسیم خان ارشد صدیقی، عرفان طاہر، محسن علی، کنول اعجاز بلدیہ ہاکی کلب کے صدر طارق نیازی، سیکریٹری ماجد رفیق، معروف اسپورٹس اینکر یحییٰ حسینی، سجاس کے صدر و اینکر پرسن آصف خان، پاکستان باڈی بلڈنگ فیڈریشن کے سیکریٹری سہیل انور، سندھ وومن ہاکی ٹیم کی کوآرڈینیٹر تہمینہ بتول، ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کے ارکان، سمیت دیگر بھی موجود تھے
تقریب سے خطاب کے دوران سیدہ شہلا رضا نے کہا کہ پی ایچ ایف اور کے ایچ اے کے ساتھ مل کر کام کرنے کا مقصد کھلاڑیوں کی فلاح بہبود کے لئے نئے راستے تلاش کرنا ہے، میں صرف کراچی وومن ہاکی ٹیم کے لئے بلکہ ہر ایک کھلاڑی کے مسائل کے حل کے لئے جس جس کے پاس جانا پڑا جاؤنگی۔ اولمپئنز اصلاح الدین کا کہنا تھا کہ حیدر حسین کی کاوشیں رنگ لا رہی ہیں ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کی تشکیل کے ایچ اے کا بڑا کارنامہ ہے، میں حیدر حسین کے ساتھ کھڑا ہوں،
اولمپیئن سمیع اللہ نے کہا کے ایچ اے پورے ملک کے لئے ایک مثال ہے۔ پہلے دن سے یقین تھا کہ حیدر حسین ہاکی کی بحالی کے لئے کچھ نہ کچھ کر گزریں گے، پروفیشنل وومن ٹیم کے قیام سے میرا اندازہ درست ثابت ہوگیا، اب یوتھ پر مشتمل پروفیشنل ٹیم کا قیام ضروری ہوگیا ہے
تقریب سے خطاب کے دوران اولمپیئن ناصر علی اور چیئرمین گلفراز احمد خان نے کہا کہ ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کی تشکیل ہاکی کی بحالی کی جانب نقطہ آغاز ہے، مہنگائی کے طوفان میں کھلاڑیوں کو ماہانہ وظیفہ دینا کھیل کی اصل خدمت ہے، مارکیٹنگ ہیڈ ٹاپ سٹی ون ساؤتھ ریجن عمران سلیم کا کہنا تھا کہ ٹاپ سٹی ون کے تحت نجی طور پر وومن ہاکی ٹیم کی تشکیل پہلا مرحلہ ہے، ٹیم کو تمام دستیاب سہولت فراہم کرنا ٹاپ سٹی ون کی زمہ داری ہے، اس موقع پر عباس حیدر اور عمران اسلم کا کہنا تھا کہ وومن ٹیم کو پروفیشنل ٹیم بنانے کے لئے تمام دستیاب سہولت فراہم کرنا ہماری زمہ داری ہے ۔۔
کے ایچ اے کے سیکریٹری حیدر حسین نے اپنے خطاب میں ٹاپ سٹی ون کا شکریہ ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ٹاپ سٹی ون کے چیف ایگزیکٹو کنور معیز اسپورٹس لور شخصیت کے مالک ہیں۔ وومن ٹیم کا قیام ان کی ذاتی دلچسپی کا مظہر ہے، ٹیم کی تشکیل میں اولمپیئن ناصر علی کا کردار بہت اہم رہا، ناصر علی دو ماہ تک مسلسل کھلاڑیوں کی کوچنگ کرتے رہے جبکہ چیف سلیکٹر کی حیثیت سے انہوں نے روانہ کی بنیاد پر کھلاڑیوں کی کارکردگی کو اچھی طرح جانچنے کے بعد ٹیم کا اعلان کیا، حیدر حسین نے یوم جناح ہاکی ٹورنامنٹ کے ذریعے کے ایچ اے اور ٹاپ سٹی ون کے درمیان ورکنگ ریلیشن شپ قائم کرنے کا موقع دینے پر سندھ رینجرز خاص کر سیکٹر کمانڈر بھٹائی ونگ بریگیڈیئر شبیر خان، ونگ کمانڈر کرنل مصور عباس، اور میجر عمران حیدر کی خدمات کو سراہتے ہوئے ان کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کیا۔
تقریب کے اختتام پر ٹاپ سٹی ون اور کے ایچ اے کے درمیان ہونے والے یاداشت کے مطابق ٹاپ سٹی ون کراچی وومن ہاکی ٹیم کی 18 کھلاڑیوں میں فی کس 15 ہزار روپے, ٹیم منیجر 35 ہزار، ٹرینر 25 ہزار اور کوچز کو 20 ہزار فی کس 20 ہزار روپے کے چیک تقسیم کئے گئے، واضح رہے کھلاڑیوں کو مکمل ہیلتھ انشورنس کی سہولت بھی حاصل ہوگئی ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here