ہیمانی انٹرنیشنل ، بین الاقوامی مرکز جامعہ کراچی میں ”آر اینڈ ڈی“ یونٹ قائم کریگا

0
583

ہیمانی انٹرنیشنل ، بین الاقوامی مرکز جامعہ کراچی میں ”آر اینڈ ڈی“ یونٹ قائم کریگا
بین الاقوامی مرکز اورہیمانی انٹرنیشنل کے درمیان معاہدہ، ڈاکٹر پنجوانی سینٹر میں پروفیسر اقبال چوہدری و دیگر کا خطاب
دونوں ادارے باہمی تعاون سے”آر اینڈ ڈی“ یونٹ میں بالخصوص کاسمیٹکس اور نیچرل ہیلتھ پر تحقیقی کام کریں گے
کراچی:(اسٹاف رپورٹر) بین الاقوامی مرکز برائے کیمیائی و حیاتیاتی علوم (آئی سی سی بی ایس) جامعہ کراچی کے ادارے ٹیکنالوجی پارک اور ٹیکنالوجی انکیوبیشن سینٹر اور ہیمانی انٹرنیشنل کے درمیان ایک معاہدے پر دستخط ہوئے ہیں جس کا مقصد دونوں اداروں کا نہ صرف مشترکہ طور پر ریسرچ اینڈ ڈیویلپمنٹ کے میدان میں کام کرنا ہے بلکہ آئی سی سی بی ایس، جامعہ کراچی میں آر اینڈ ڈی یونٹ بھی قائم کرنا ہے جس میں بالخصوص کاسمیٹکس اور نیچرل ہیلتھ پر تحقیقی کام کیا جائے گا۔
آئی سی سی بی ایس جامعہ کراچی کے سربراہ اور کامسٹیک کے کوارڈینیٹر جنرل پروفیسر ڈاکٹرمحمد اقبال چوہدری اور ہیمانی انٹرنیشنل کے مارکیٹنگ ڈائریکٹر علی عباس نے جمعہ کو ڈاکٹر پنجوانی سینٹر فار مالیکولر میڈیسن اینڈ ڈرگ ریسرچ جامعہ کراچی میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران معاہدے پر دستخط کیے۔ تقریب میں ہیمانی انٹرنیشنل بین الاقوامی مرکز کے آفیشل بھی موجود تھے۔
اس موقع پر پروفیسر ڈاکٹرمحمد اقبال چوہدری نے معاہدے کے تحت بین الاقوامی مرکز جامعہ کراچی میں ریسرچ کے لیے ہیمانی انٹرنیشنل کو جگہ جبکہ ہیمانی انٹرنیشنل ریسرچ اینڈ ڈیویلپمنٹ یونٹ قائم کریگا جس میں انسانی وسائل کی تربیت بھی عمل میں آئے گی۔ انھوں نے کہا آئی سی سی بی ایس جامعہ کراچی کا شمارترقی پذیر دنیا کے بہترین حیاتیاتی اور کیمیائی علوم کے اداروں میں ہوتا ہے، بین الاقوامی مرکز اپنی نوعیت کا واحد پاکستانی تحقیقی ادارہ ہے جونہ صرف آئی ایس او سے سند یافتہ ہے بلکہ “یونیسکوسینٹر فار ایکسلینس کیٹیگری 2 انسٹی ٹیوٹ” کے منصب پر بھی فائز ہے۔
ہیمانی انٹرنیشنل کے مارکیٹنگ ڈائریکٹر علی عباس نے آئی سی سی بی ایس جامعہ کراچی میں ہونے والی تحقیقی سرگرمیوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی و تحقیقی ادارے کے ساتھ ایک انڈسٹری کا مل کر کسی یونیورسٹی میں ”آر اینڈ ڈی“ یونٹ کے قیام سے یقینا ایک نئی مثال قائم ہوگی۔ یہ تحقیقی یونٹ نیچرل ہیلتھ اور بیوٹی پر مبنی سمیٹکس پرزیادہ توجہ دیگا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here