بی ایس بائیو ٹیکنولوجی کا نیا ڈگری پروگرام شروع

0
179

بی ایس بائیو ٹیکنولوجی کا نیا ڈگری پروگرام شروع
کراچی:(اسٹاف رپورٹر) محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی نے اگلے مہینے سے شروع ہونے والے سمسٹر اسپرنگ 2021 سے ایک نیا 4 سالہ ڈگری پروگرام بی ایس- بائیوٹیکنالوجی شروع کر رہی ہے جس میں داخلے جاری ہیں۔ یونیورسٹی کی لائف سائنسز فیکلٹی کے ڈین پروفیسر، ڈاکٹر کامران عظیم کا کہنا ہے کہ بائیو ٹیکنالوجی کا مضمون اس وقت زندگی کے تمام اہم شعبوں جن میں میڈیکل ، زراعت، ادویہ سازی، ماحولیات اور فوڈ انڈسٹری شامل ہیں میں بڑی اہمیت اختیار کر چکی ہے اور اس کی تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ بائیو ٹیکنالوجی کے اداروں جن میں یونیورسٹیز، ہسپتال، لیب، زرعی ترقیاتی ادارے ، درسگاہیں اور فوڈ تیار کرنے والی فیکٹریوں میں باآسانی ملازمت حاصل کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بائیو ٹیکنولوجی دراصل حیاتیات، سالماتی حیاتیات، جینیات اور حیاتیات کے بہت سے دوسرے شعبوں پر لاگو ٹیکنالوجی ہے ، بائیو ٹیکنولوجی سیلولر اور بائیو مکولر عمل کو ٹیکنالوجی اور مصنوعات تیار کرنے کے لئے استعمال کرتی ہے جو ہماری زندگی اور فطرت کو بہتر بنانے میں معاون ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ مفید کھانا جیسے روٹی پنیر اور دودھ کی مصنوعات کو محفوظ کرکے جو ہم اب تک کئی سالوں سے یہ کام کر چکے ہیں ایک نیا انداز دیا ہے، بایوٹیکنالوجی نے حال ہی میں بیماریوں سے لڑنے، ماحولیاتی نقصان کو کم کرنے، بھوکے کو کھانا کھلانے، کم اور صاف ستھری توانائی استعمال کرنے اور محفوظ و صاف ستھرا اور زیادہ مؤثر صنعتی پیداواری عمل ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ 250 سے زائد بائیو ٹیکنالوجی کی صحت کی دیکھ بھال کرنے والی مصنوعات اور ویکسین مریضوں کے لیے مہیا کی جا چکی ہیں جن میں ایسے افراد پہلے کی بیماریوں سے دوچار نہیں تھے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں 13.3 ملین سے زائد کاشتکار پیداوار میں اضافے ، کیڑے مکوڑوں سے پہنچنے والے نقصان کو روکنے اور ماحولیاتی نقصانات کو کم کرنے کے لیے بائیو ٹیکنالوجی استعمال کرتے ہیں ۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here